پاکستانی

چین سے بھاگ کر واپس پاکستان آنے والی لڑکی تنسیخِ نکاح کیلئےعدالت پہنچ گئی

چین سے بھاگ کر واپس گوجرانوالہ پہنچنے والی لڑکی نے تنسیخ نکاح کےلئے عدالت سے رجوع کرلیا۔ چینی شہریوں کا پاکستانی لڑکیوں سے شادی کا معاملہ مزید وسعت اختیار کر گیا ہے. گوجرانوالہ کی ربیعہ شوہر کے تشدد سے تنگ آکر چین سے بھاگ کر پاکستان آگئی۔ گوجرانوالہ کے علاقے فتومنڈ کی رہائشی لڑکی نے تنسیخ نکاح کے لئے عدالت سے رجوع کرلیا۔ ربیعہ نے درخواست سینئر سول جج شبانہ حمید کی عدالت میں دائر کی۔

لڑکی نے یکم جنوری 2019 کو چینی باشندے ژانگ شو چن سے شادی کی تھی، ربیعہ نے درخواست میں کہا کہ چین لے جاکر ژانگ شو چن تشدد کرتا تھا۔ متاثرہ لڑکی کا کہنا ہے کہ اس نے پاکستانی ایمبیسی کے ذریعے پولیس سے رابطہ کیا، چینی پولیس کی مدد سے گوجرانوالہ واپس پہنچی ہوں۔ ربیعہ کی والدہ کے مطابق رشتہ محلے دار مسیحی خاتون نے طے کرایا تھا، شادی کے بعد ربیعہ چین چلی گئی تھی۔ والدہ نے مطالبہ کیا کہ پاکستانی لڑکیوں پر ظلم کرنیوالے چینیوں کیخلاف کارروائی کی جائے۔

Source
Jang

Related Articles

Back to top button
شیئر کریں