پاکستانی

سانحہ کوٹ رادھا کشن ،5 مجرمان کی پھانسی کی سزائوں کیخلاف اپیلیں خارج ،3 کی رہائی کا حکم

لاہور ہائیکورٹ نے سانحہ کوٹ رادھا کشن کیس میں 5 مجرمان کی پھانسی کی سزائوں کے خلاف اپیلیں خارج کر دیں جبکہ تین کی رہائی کا حکم دیدیا ۔سانحہ کوٹ رادھا کشن میں سزا پانے والے آٹھ مجرمان نے سزا کے خلاف اپیلیں دائر کی تھی ،ہائیکورٹ کے جسٹس محمد قاسم خان کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کر رکھا تھا ۔

عدالت نے فیصلہ سناتے ہوئے مجرم ریاض، عرفان، مہدی خان اور دیگر دو کی چار مرتبہ سزائے موت برقرار رکھی، جبکہ حنیف، حافظ، اشتیاق کی اپیلیں منظور کر کے انہیں بری کرنے کا حکم دے دیا۔انسداد دہشتگردی عدالت نے پانچوں مجرمان کو چار چار مرتبہ سزائے موت سنائی تھی،دہشتگردی عدالت نے مجرمان حارث، ارسلان اور منیر کو دو دو سال قید کی سزا سنائی تھی۔

وکیل مجرمان نے کہا کہ انسداد دہشتگردی عدالت نے قانون کو مد نظر رکھے بغیر فیصلہ جاری کیا،تمام مجرمان کو مقدمہ میں بعد میں نامزد کیا گیا،تمام مجرمان کو بری کرنے کا حکم دیا جائے جبکہ سرکاری وکیل نے کہا کہ تمام مجرمان کے خلاف ٹھوس شواہد موجود ہیں،مجرمان کی سزا کے خلاف اپیل خارج کی جائے۔یاد رہے کہ 2014ء میں رادھا کشن میں بھٹے میں کام کرنے والے مسیحی جوڑے کو توہینِ قرآن کے الزام میں سو سے زائد مشتعل افراد نے تشدد کے بعد بھٹی میں زندہ جلا دیا تھا۔سپریم کورٹ نے واقعے کے 18 روزبعد کوٹ رادھا کشن واقعے کا از خود نوٹس لیا تھا۔اس کیس میں 105 ملزمان کو نامزد کیا گیا تھا۔

مزید خبریں

شیئر کریں
Close