وزیراعظم عمران خان سے کاتھولک اورچرچ آف پاکستان کے بشپس کی ملاقات

وزیراعظم پاکستان سے کاتھولک اورچرچ آف پاکستان کے بشپس کے وفد نے ملاقات کی۔اس موقعہ پر وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ حکومت اقلیتوں کے حقوق کا تحفظ جاری رکھے گی اور قومی زندگی میں ان کی شرکت کے مساوی مواقع یقینی بنائے گی۔ انہوں نے کہا کہ آئین پاکستان تمام شہریوں کو رنگ، مذہب اور نسل کی تفریق کے بغیر مساوی حقوق فراہم کرتا ہے۔وزیراعظم نے تعلیم، صحت اور سماجی بہبود سمیت مختلف شعبوں میں غیر مسلموں خصوصاً مسیحی برادری کی خدمات کو سراہا۔انہوں نے بین المذاہب ہم آہنگی کے فروغ اور پاکستان کی ترقی وخوشحالی کیلئے مل کر کام کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔مسیحی وفد کے اراکین نے وزیراعظم کو سربراہ حکومت منتخب ہونے پرمبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ مسیحی برادری وزیراعظم کے وژن کو عملی جامہ پہنانے کیلئے ان کا بھرپور ساتھ دے گی۔

وفد نے وزیراعظم کو مسیحی برادری کو درپیش بعض مسائل کے بارے میں آگاہ کیا اور بین المذاہب ہم آہنگی کے فروغ اور اقلیتوں کے مسائل کے حل کیلئے تجاویز بھی پیش کیں۔وفد نے حکومت کے ترقیاتی ایجنڈے کی مکمل حمایت جاری رکھنے کی یقین دہانی کرائی۔وفد میں کاتھولک بشپس میں سے اسلام آباد/ راولپنڈی ڈایوسیس کے آرچ بشپ جوزف ارشد اور لاہور آرچ ڈایوسیس کے آرچ بشپ سبسٹین شاء شامل تھے جبکہ چرچ آف پاکستان کے بشپ آف لاہور عرفان جمیل، بشپ آف سیالکوٹ ایلون جان سیموئیل،بشپ آف ملتان لیو راڈرک پال شامل تھے۔دیگر چرچز کی نمائندگی ڈاکٹرقیصرتولس (لاہور)،ڈاکٹرلیاقت قیصر(لاہور)، انتھونی لیموئل،جنرل سیکرٹری پاکستان بائبل سوسائٹی،جینیفر جیک جیون،سابق ڈائریکٹرکرسچین اسٹڈی سنٹر،پینٹی کوسٹل چرچز کے نمائندہ ڈاکٹرجمال ناصر اورروبینہ فیروز نے کی۔اس موقعہ پر پی ٹی آئی کی رکن قومی اسمبلی شہنیلا روت بھی موجود تھیں۔