آسیہ بی بی کے وکیل پاکستان چھوڑ کر یورپ روانہ

آسیہ بی بی کے وکیل یورپ روانہ ہو گئے ، تفصیلات کے مطابق سپریم کوٹ سے توہین رسالت کیس میں رہائی پانے والی آسیہ بی بی کے وکیل ملک چھوڑ کر چلے گئے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق آسیہ بی بی کے وکیل سیف الملوک کو آسیہ بی بی کا کیس لڑنے اور انہیں رہائی دلوانے کے بعد جان سے مار دینے کی دھمکیاں موصول ہو رہی ہیں۔ ۔یورپ روانگی سے قبل ایئرپورٹ پر گفتگو کرتے ہوئے 62 سالہ وکیل کا کہنا تھا کہ اس صورتحال میں میرا پاکستان میں رہنا نا ممکن ہے۔ انہوں نے کہاکہ انہوں نے آسیہ بی بی کیلئے مزید قانونی جنگ لڑنی ہے اور ایسے میں ان کا زندہ رہنا بہت ضروری ہے۔جب سیف الملوک نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ یہ حالات بدقسمت ضرور ہیں لیکن غیر متوقع نہیں ہیں۔ انہوں نے کہاکہ یہاں دکھ کی بات ہماری حکومت کا ردِ عمل ہے جو ملک کی سب سے بڑی عدالت کے حکم کی تعمیل میں ناکام ہوئی۔تاہم انصاف کیلئے جدوجہد جاری رہنی چاہیے۔سیف الملوک کا کہنا ہے کہ اگر آرمی انہیں سیکورٹی فراہم کرے تو وہ آسیہ بی بی کیس کے خلاف دائر کی گئی نظر ثانی کی اپیل میں پاکستان واپس آئیں گے اور آسیہ بی بی کی نمائندگی کریں گے۔ آسیہ بی بی کے وکیل کا مزید کہنا تھا کہ میرے اہل خانہ کی جان کو بھی شدید خطرات ہیں اس لیے وفاقی حکومت انہیں سیکورٹی فراہم کرے۔ جب کہ آسیہ بی بی کی بریت کے فیصلہ پر نظر ثانی کے لیے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں اپیل دائرکر دی گئی ہے۔ اپیل میں استدعا کی گئی ہے کہ سپریم کورٹ آسیہ بی بی سے متعلق بریت کے فیصلے پر نظر ثانی کرے ۔آسیہ بی بی کا نام نظر ثانی اپیل کے فیصلے تک ای سی ایل میں ڈالا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں