آسیہ بی بی کو تحفظ دینا حکومت کی ذمہ داری ہے:چیف جسٹس ثاقب نثار

چیف جسٹس آف پاکستان جناب جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ آسیہ بی بی کا کیس ظاہر کرتا ہے کہ انہیں بغیر ثبوتوں کےپھنسایا گیا تھا۔وہ برطانوی پارلیمنٹ میں پاکستانی نژاد اراکین پارلیمنٹ سے گفتگو کررہے تھے۔سابق برطانوی وزیر بیرونس سعیدہ وارثی نے اس موقعہ پر کہا کہ چیف جسٹس نے آسیہ بی بی کیس میں بڑا دلیرانہ و جراتمندانہ فیصلہ دیا ہے۔چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ آسیہ بی بی کیس اتنا طویل عرصہ نہیں چلنا چاہیے تھا لیکن افسوس 8 برس چلا۔یہ کیس کئی برسوں سے تعطل میں پڑا تھا لیکن شکر ہے ہم نےاسے نمٹا دیا۔انہوں نے کہا کہ شہریوں کی جان کی حفاظت کرنا ریاست کی ذمہ داری ہے لہٰذا آسیہ بی بی کو کسی جگہ پناہ لینے کی ضرورت نہیں۔آسیہ بی بی کو کسی ملک میں پناہ ملنے کا مطلب ہوگا کہ ہم ناکام ہوگئے۔چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ہمیں آسیہ بی بی کو مکمل تحفظ دینا چاہیے۔ اس کی حفاظت حکومت کی ذمہ داری ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں