بین الاقوامی

مصر کے مسیحیوں کی جانب سے پورے رمضان میں مسلمانوں کیلئے مفت کھانا

اسلامی عسکریت پسندوں کے فرقہ وارانہ تشدد کیخلاف فرقہ وارانہ یکجہتی کا مظاہرہ کرتے ہوئے قاہرہ کے مصری مسیحیوں نے مسلمان پڑوسیوں کے لئے رمضان میں سحر و افطار میں مفت کھانے کا انتظام کیا ہے۔اس طرح کی تقریبات ہر سال مصر میں منعقد کی جاتی ہیں لیکن داعش کے حملوں کے نتیجے میں اس سال اس تقریب میں مسیحیوں کی جانب سے مزید گرم جوشی دکھائی گئی،جس کے نتیجے میں عسکریت پسندوں کی اس فرقہ وارانہ تقسیم کو مسترد کیا گیا۔
داؤد ریاد نامی ایک مسیحی شخص نے گزشتہ ہفتے اپنے گھر کے قریب ٹیبل سیٹ کیئے اور گھر میں بنا کھانا افطار میں مسلمانوں کیلئے میز پر سجایا تاکہ وہ اپنے روزے کھول سکیں۔ایک مسلم رہائیشی طارق علی نے بتایا کہ میرے لئے یہ حیرانی کی بات تھی جب میزبان نے مجھے بچوں سمیت دعوت دی۔ انہوں نے گلی میں مسیحی یا مسلمان میں امتیاز کیئے بغیر میز لگایا اور ہر کسی کو دعوت دی کہ وہ آکر اپنا روزہ کھول لیں۔
اس علاقے میں کئی مسیحی خاندان روزانہ کی بنیاد پر ایسی تقاریب منعقد کی جاتی ہیں۔ کاپس مسیحی مصر کی کل آبادی کا دسواں حصہ ہیں ۔اس علاقے میں داعش کے مسلح افراد نے کاپس مسیحیوں کے ایک وفد پر حملہ کیا جس میں قریب29افراد کے جابحق ہونے کی خبریں سامنے آئیں تھیں،اس حملے کے بعد کئی گرجا گھروں پر حملوں کے واقعات رونما ہوئے جسکی ذمہ داری ان عسکریت پسندوں نے قبول کی تھی۔

Related Articles

Back to top button