‏مسیحی خبریں

پشاور: مسیحی نوجوان 10سال سے بغیر ایف آئی آر جیل میں قید

سینٹرل جیل پشاور میں بغیر ایف آئی آر 10سال سے مسیحی نوجوان کے قید ہونے کا انکشاف ہوا ہے جبکہ قیدی کی بریت کیلئے پشاور ہائیکورٹ میں رٹ پٹیشن دائر کردی گئی ہے ،قیدی شکیل مسیح نے رٹ سیف اللہ محب کاکا خیل کی وساطت سے دائر کی جس میں موقف اپنایاگیاہے کہ اسکے خلاف کوئی ایف آئی آر یا کیس نہیں ہے ،انہیں تقریبا ہر 15روز بعد عدالت لیجایا جاتا ہے اورباہر سے ہی واپس لے آتے ہیں لیکن عدالت کے سامنے پیش نہیں کیاجاتا۔

شکیل مسیح نے موقف اپنایا ہے کہ اس نے متعددبار درخواستیں دیں کہ انکے خلاف اگر کوئی مقدمہ ہو تو قانون کے مطابق بتایا جائے۔ درخواست کے مطابق قیدی پر الزام ہے کہ اس نے سیکورٹی اہلکار کو قتل کردیا تھا اور اسکا ریکارڈ10سال قبل غائب کر دیا گیا تھا جوضلع خیبرکی عدالت میں پیش نہیں کیاجاتا نہ ہی اسے رہائی دی جارہی ہے اوروہ ایک ایسے گناہ کی سزا کاٹ رہاہے جو اسکے خلاف ثابت نہیں ہوا ۔ اسکے والد بھی اسکی رہائی کیلئے کوششیں کرتے ہوئے وفات پا گئے۔

Source
Jang

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے